کراچی : روس سے سستے تیل کی خریداری کا معاہدہ طے پاگیا۔ کمرشل معاہدے کا پہلا کارگو ایک لاکھ میٹرک ٹن خام تیل لیکردسمبرمیں پہنچے گا۔روسی تیل عام مارکیٹ سے 10 ڈالر فی بیرل سستا ہے۔لوکل ریفائنریزروسی تیل کی قیمت 60 ڈالر فی بیرل کے حساب سے ادا کرے گی۔پیٹرولیم ڈویژن ذرائع نے کہا کہ روس اور پاکستان کے درمیان معاہدہ کمرشل بنیادوں پر ہوا ہے، لوکل ریفائنریز روس سے براہ راست تیل خرید سکیں گی۔
ذرائع نے کہا کہ ریگولر سپلائی کے بعد گورنمنٹ ٹو گورنمنٹ معاہدہ متوقع ہے، جبکہ روس سے کمرشل معاہدے کا پہلا کارگو دسمبر میں پاکستان پہنچے گا، جو ایک لاکھ میٹرک ٹن خام تیل پر مشتمل ہوگا۔ذرائع کے مطابق معاہدے کے تحت روس پاکستان کو پورٹ پر تیل فراہم کرے گا اور لوکل ریفائنری روسی تیل کی قیمت 60 ڈالر فی بیرل کے حساب سے ادا کرے گی۔ایک بیرل میں 159 لٹر پٹرول ہوتا ہے اس طرح پاکستان کو 105 روپے فی لٹر پٹرول ملے گا۔
کمرشل معاہدے میں جی سیون ممالک کو روسی تیل کی قمیت کی حد کو مدنظر رکھا گیا، روسی خام تیل کرایہ اور پریمیم نکال کر بھی عام مارکیٹ سے 10 ڈالر فی بیرل سستا ہے. پہلے ٹیسٹ کارگو میں بھی پاکستان کو4 کروڑ ڈالر کی بچت ہوئی تھی۔

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں